Pakistan

پہیلیاں

مو تی سچے تھے یا جھوٹے

ہاتھ لگتے ہی سب ٹوٹے

(شبنم کے قطرے)

وہ خود چکھے اور نہ کھائے

سب میوئے اوروں کو کھلائے

(پھل دار درخت)

دیکھا ایک نیلا تالاب

جو ہے سوکھا اور بے آب

اس میں ایک سنہری ناؤ

رات کو اکثر چلتی پاؤ

(آسمان پر چاند)

سبز دوپٹا اوڑھ کے آئی

آکر لال پری کہلائی

(مہندی)

نہ رکشا ہے نہ گاڑی ہے

نہ کھاتی ہے نہ پیتی ہے

گھر بیٹھے وہ لے جا تی ہے

سب کو سیر کراتی یے

(کتاب)

ہے رفتار اس کی گفتار

کہہ دے باتیں کئی ہزار

(قلم)

About the author

meerab

Leave a Comment