صحت

کچھ عادتوں کو چھوڑنا بہتر ہے،

Lifeclass_1432899c
Written by meerab

مناسب خوراک ،ورزش اور بھر پور نیند کے باوجود آپ کی چند عادتیں آپ کو بیمار کر سکتی ہیں ۔

انسان بھی کیا چیز ہے کبھی کبھار ایسی عادتوں میں مبتلا ہو جاتا ہے   کہ چھڑائے نہیں چھوٹتی۔لیکن ان کے اثرات ایسے ہوتے ہیں کہ ان کو چھوڑے بغیر چارہ بھی نہیں ۔آپ اچھی خوراک کھاتے ہیں ،مناسب ورزش کرتے ہیں اور رات کو بھر پور نیند بھی لیتے ہیں ۔لیکن اس کے باوجود کھ عادتیں آپ کی صحت کو کچھ مسائل سے دوچار کر سکتی ہے اور آپ کو پتہ بھی نہیں چلتا کہ اس کی وجہ کیا ہے۔یہ عادتیں کیا ہیں اور ان سے کیسے پیچھا چھڑایا جا سکتا ہے۔

ٹانگ پر ٹانگ رکھ کر بیٹھنا ۔

ٹانگ پر ٹٓا نگ رکھ کر بیٹھنے سے بلڈ پریشر میں ایک دم سے اضافہ ہو جاتا ہے۔طبی ماہرین کے مطابق???????????????????????????????????????????????????? اس طرح بیٹھنے سےخون کا انقباضی دباو تقریبا سات فیصد اور انبساطی دباؤ دو فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔تھوڑی دیر تک اس طرح بیٹھنے سے فرق نہیں پڑتا جبکہ زیادہ دیر اس پوزیشن میں بیٹھے رہنے سے کو لہوں کے جوڑوں میں بھی کچھاؤ پیدا ہونے لگتا ہے،جس سے ٹانگوں کو خون پہنچانے والی نسیں دب جاتی ہیں ۔طبی ماہرین کے مطابق دس سے پندرہ منٹ تک اس پوزیشن مین بیٹھنے کے بعد لازمی طور پر اٹھ کر چہل قدمی کرنی چاہیے۔

زیادہ دیر تک بیٹھ کر ٹی وی دیکھنا

آپ جتنی دیر تک بیٹھ کر ٹی وی دیکھیں گے اتنی ہی دیر تک آپ کی جسمانی فعالیت کم ہو گی۔اس سے نہ صرف آپ کا وزن بڑھے گا بلکہ ذیابیطس کا بھی خطرہ زیادہ ہوگا۔ماہرین کہتے ہیں کہ اگر آپ دو گھنٹے بیٹھ کر ٹی وی دیکھتے ہیں تو آپ پر تیس منٹ کی ورزش لازم ہو جاتی ہے۔اس لیے ٹی وی دیکھنے کے دوران وقفے وقفے سے اٹھ کے کوئی کام کرنا چاہیے،مثلا مانی پی لینا چاہیے ،ٹیرس کا چکر لھا لینا چاہیے ۔

پیٹ کے بل سونا۔

پیٹ کے بل سونے سے گردن ذرا سی پیچھے سے اٹھی ہوتی ہے اس سے آپ کو گردن یا ہاتھوں مین درد یاa_sleeping_man سن ہونے کی شکایت ہو سکتی ہے۔گردن پیچھے کی طرف اٹھی ہونے کی وجہ سے اعصاب پر بھی دباؤ پڑتا ہے۔اس لیے اپنے سونے کی پوزیشن اس طرح تبدیل کریں کہ گردن اٹھی ہوئی نہ  ہو ۔اور اگر پوزیشن تبدیل ہونے کے باوجود آپ کے گردن اور ہاتھوں میں درد رہتا ہے یا وہ سن ہو جاتے ہیں تو فوراڈاکٹر سے رجوع کریں۔

منفی سوچ رکھنا۔

معاملات کا روشن پہلو دیکھنا صرف ذہنی صحت کے لیے ہی مفید نہیں بلکہ اس کے بہت سے جسمانی فوائد بھی ہیں ،خاص طور پر امراض قلب سے بچنے کے لیے ماہرین یہ ہی مشورہ دیتے ہیں کہ آپ ہمیشہ گلاس کو آدھا کالی نہیں بلکہ آدھا بھرا ہوا دیکھیں ۔مثبت انداز میں سوچنے سے آپ ذہنی اور جسمانی دونوں طرح سے صحت مند رہیں گے۔

ٹیکنالوجی کا غلام بننا۔

مانا کہ موبائل فون اور کمپیوٹر کے بہت سے فوائد ہیں ۔اور اب یہ ضرورت بھی بن چکے ہیں  لیکن ان کےNFC مضر اثرات کو بھی ہم نظر انداز نہیں کر سکتے۔لمپیوٹر کا زیادہ دیر تک اور مسلسل استعمال سر درد ،بے خوابی،ذہنی تناؤاور آنکھوں کے مسائل کا باعث بن سکتا ہے۔اسی طرح موبائل فون کا بھی زیادہ دیر تک استعمال صحت کے لیے مضر ہو سکتا ہے۔سائنسدانوں کے مطابقموبائل فون سے نکلنے والی تابکاری برین ٹیومر کا سبب ہو سکتی ہے۔اس لیے اس کے غیر ضروری استعمال سے حتی الامکان پرہیز کرنا چاہیے۔

صبح بیدار ہوتے ہی انگرائی لینا۔

جب ہم انگرائی لیتے ہیں تو ہمارے جسم کا اوپری حصہ پیچھے کی طرف جھکتا ہے اس سے ریڑھ کی ہڈیWakingInMorning کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہوتا ہے۔رات بھر سونے کی وجہ  سے ریڑھ کی ہڈی کے مہرے آبیدہ ہو جاتے ہیں ۔جب ہم بیدار ہوتے ہی انگرائی لیتے ہیں یا ورزش کرتے یں تو ریڑھ کی ہڈی کے مہروں پر دباؤ مزید بڑھ جاتا ہے۔اس لئے صبح بیدار ہوتے ہی انگرائی یا ورزش نہ کریں بلکہ اٹھنے کے دس منٹ بعد یہ کام کریں ۔

About the author

meerab

Leave a Comment