خواتین

ہارمون کی کمی کے باعث زچگی کی مشکلات میں اضافہ

Happy mother with newborn baby
Written by meerab

وہ خواتین جو امید سے ہیں اگر ان کے گلے میں موجود تھائی رائیڈ غدود کم مقدار میں ہارمو ن تیار کر رہا ہے تو ایسی خواتین کو زچگی کے دوران مشکلات پیش آ سکتی ہیں۔یہ بات پہلے سے معلوم ہے کہ تھائی رائیڈ غدود سے تیار ہونے والا ہارمون تھائی راکسن اگر ماں بننے والی خاتون کے جسم کیں کم مقدار میں ہو تو اس کو زچگی کے دوران بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا یے۔اسقاط حمل کا خطرہ بڑھ جاتا ہے،بچے کی قبل از وقت ہو سکتی ہے۔ہائی بلڈ پریشر،سر میں شدید درد،بصری خامیاں ،متلیکی شکایات عام ہو جاتی ہیں۔ہالینڈ کی ایک ریسرچ ٹیم نے یہ انکشاف کیا ہے کہ تھائی راکسن کی سطح اگر تھوڑی بھی کم ہو تو زچگی کے دیگر مسائل جنم لے سکتے ہیں۔اور اس میں سب سے اہم مادر شکم میں بچے کی پوزیشن کا غلط ہونا شامل ہےجس سے وضع حمل شدید تر ہو جاتا ہے۔اگرچہ اس صورت میں بھی بچے کا سر نیچے کی جانب ہی ہوتا ہے۔لیکن اس کا رخ تبدیل ہوتا ہے یعنی اس کا رخ ماں کے پیٹ کی بجائے اس کی پیٹھ کی جانب ہو تا ہے۔

ایسی صورت میں نہ صرف وضع حمل طویل اور دشوار گزار ہو جاتا ہےبلکہ آلات استعمال کرنے ہا پھر سیز یرین کرنے کی نوبت آسکتی ہے۔ہارمون کا یہ مسئلہ اتنا عام ہو چکا ہے کہ دس میں سے ہر ایک حمل اس سے متاثر ہو تا ہے۔اس بنا پر یہ ضروری ہے کہ بچے کی پیدائش سے پہلے جتنے بھی ٹیسٹ کیے جائیں ان میں ہارمون کی سطح جاننے کے لیے خون کے ٹیسٹ لازمی کئے جا ئیں

ڈاکٹر وکٹرپوپ اور ان کی ٹیم کا خیال ہے کہہارموں کی اس کمی کی وجہ سے مادرشکم بچہ اس طرح10-things-never-say-pregnant-woman-05b-af حرکت نہیں کرتا جیسے کہ ایسے کرنا چاہیےاور شاید اسی لیے ایسی پوزیشن اختیار کر لیتا ہے جو کہ زچگی کے لیے آسان نہیں ۔ڈاکٹر پوپ نے مزید کہا کہ حال ہی میںمیں کیے گیے طبی  جائزوں میں بھی یہ دیکھا گیا ہے کہ جن خواتین میں تھائی راکسن کی کمی ہوتی ہے ان کے بچے دو سال کی عمر کو پہنچ کر بھی اپنے اعضا۶ کو مناسب انداز میں حر کت دینے کے قابل نہیں ہوتے۔

اس سے یہ اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ تھا ئی دائیڈ غدود اگر منا سب طور پر کام نہ کر رہے ہوں تو مادر شکم میں جنین کی حرکت بھی متاثر ہو سکتی ہے۔ان کے مطابق خود بچے کا تھا ئی رائیڈ غدود بیس ہفتے سے پہلے تیار نہیں ہوتا اس لیے اس کا انحصار اپنی ماں کے ہارمون پر ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ تھائی رائیڈ ہارمون میں کمی اور حمل کے نقائص میں تعلق پر مزید ریسرچ ک ضرورت ہے۔اور یہ بھی دیکھنا ضروری ہے کہ ان خواتین میں تھائی رائیڈ کی کمی سے کوئی بہت واضح بیماری دیکھنے میں تو نہیں آرہی۔تو کیا ایسی صورت میں ان خواتین کو اضافی تھائی راکسن دینا ضروری اور فائدہ مند ہو گا

About the author

meerab

Leave a Comment